منگل, فروری 14, 2006

احتجاج پر احتجاج

آج گاڑی کے ریڈیو کے ذریعے اطلاع ملی کہ پاکستان میں بعد از پر امن احتجاج عوام ہنگامہ آرائی پر اترآئی ہے۔ گھیراؤ جلاؤ اور
سرکاری و نیم سرکاری املاک پر پتھراؤ اور ان کو آگ لگانا۔ مغربی اداروں بلخصوص میکڈونلڈ، کے ایف سی وغیرہ کا جلاؤ۔
میں اس طریقہّ احتجاج پر احتجاج کرتا ہوں۔ کہ نصاریٰ نے جو کیا وہ قابلِ مزمت ہے اور قابلِ نفرت بھی مگر اس طریق سے سوائے
ملکی و عوامی املاک ضیاع کے کچھ حاصل ہونے والا نہیں۔ ناروے، اٹلی، جرمنی کا سفارتی بائیکاٹ و معاشی قعطع تعلقی ایک
جائیزہے۔ احتجاج کو ممکنہ حد تک پر امن رکھنا ہم سب کی مشترکہ زمداری ہے۔
میرے خیال میں سب سے پسندید و انفرادی طریقہ اسلام آباد والوں نے اختیار کیا ہے اور اسکےلئے گدھوں کا استعمال نہایت انفرادیت کا حامل، جداگانہ اور اہلیانِ اسلام آباد کی ظرافت کا مظہر ہے۔

3 تبصرے:

  • Khawar says:
    2/15/2006 05:34:00 AM

    ميں نے بهى يه فوٹو ديكهى تهى ـ
    اور اچها لگا كه ميرى برادرى كے لوگ بهى احتجاج ميں شامل هيں ـ

  • شعیب صفدر says:
    2/15/2006 07:41:00 PM

    بیچارے گدھے !!!! کیسا الزام لگ گیا ان پر

  • Asma says:
    2/15/2006 10:07:00 PM

    گدھون کا لطیفہ تو اپنی جگہ لیکن انہوں نے احتجاج کے نام پہ پورے پاکستام میں جو توڑ پھوڑ مچائی ہے ۔۔۔ الامان! پتی نہیں کتنے لوگوں کو بھگتنا پڑا ہوگا۔ اسلام آبا
    د میں بھی کوئی خاص پرامن ماحول نہیں تھا۔

    اس سے متعلق میری پوسٹ آپ یہاں پڑھ سکتے ہیں ۔۔۔۔

    http://asmamirza.blogspot.com/2006/02/honour-of-our-beloved-hadhrat-muhammad_15.html

    والسلام

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ اس موضوع پر کوئی رائے رکھتے ہیں، حق میں یا محالفت میں تو ضرور لکھیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


جملہ حقوق بنام ڈاکٹر افتخار راجہ. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.

اس بلاگ میں تلاش