ہفتہ, جون 04, 2011

چاروں سوار

امریکہ کے چار بندے بلکہ بندہ صاحبان و جنابان کو پاکستانی پولیس نے شہری علاقہ میں پورادن آوارہ کردی کرنے کے بعد روک لیا، کوئی چالیس منٹ کے بعد انہوں نے نہ تو کوئی تلاشی دی اور نہ ہی اپنی شناخت کروائی، بعد ازاں بقول ایک عدد پولسے عرف عام چھلڑ کے ان کے پاس چونکہ امریکن پاسپورٹ تھے اور باقاعدہ ویزے لگے تھے۔ لہذا انکو چھوڑ دیا گیا ہے میں سوال کرتا ہوں کہ امریکہ پاسپورٹ ہونا اور اس پر پاکستانی ویزہ کا ہونا ، انکو ہر قانون سے بالاترکرنے کو کافی ہےّ؟؟؟ کیا لازم نہ تھا کہ انکی اور انکی گاڑی کی تلاشی لی جاتی؟؟؟ ان سے سارے دن کی آوارہ گردی کے بارے میں تفتیش کی جاتی؟؟؟ ہوسکتا ہے کہ انکی گاڑی سے اسامہ بن لادن ہی نکل آتا؟؟؟ ہوسکتا ہے اس گاڑی سے کوئی امریکن پالتو خود کش بممبار نکلتا؟؟؟؟ ہوسکتا ہے کہ اس میں سے 6 من چرس نکلتی؟؟؟؟ ہمارے اگر وزیر صاحب بھی ادھر جائیں تو انکے جوتے بھی اسکین بھی ہوتے ہیں۔ کیا اچھا نہیں کہ یہ ملک ویسے ہی امریکہ کے حوالے کردیں کم سے کم فضول میں ذردواریوں، گیالانیوں ، کیانیوں، اور تتے پانیوں سے تو جان چھوٹے

7 تبصرے:

  • sheikho says:
    6/04/2011 11:37:00 PM

    بم سہی کہا آپ نے ۔۔۔امریکہ کی بجائے چائنا کو دے دیا جائے تو شاید ہمارا ملک سدھر سکے

  • افتخار اجمل بھوپال says:
    6/05/2011 07:41:00 AM

    ميں نے تو ايسے بہت سے واقعات سُنے ہيں ۔ دو ميں ميں امريکی نے اسلام آباد ٹريفک پوليس آفيسر پر بندوق بھی تانی مگر ان کے خلاف قانونی کاروائی کی اجازت نہ دی گئی ۔ اس کے بر عکس لاہور ميں تيں واقعات ہوئے جن ميں پنجاب پوليس نے پوری کاروائی کی مگر اس ميں بھی آخر وفاقی حکومےت مطلب زرداری اور گيلانی نے اُنہيں رہا کرا ديا

  • عدنان شاہد says:
    6/05/2011 11:03:00 AM

    بھائی میرے پولیسیے بے چارے کیا کرسکتے ہیں جب ہماری حکومت ہی ان کو چھوڑنے کا آرڈر کردے؟

  • شعیب صفدر says:
    6/05/2011 12:10:00 PM

    ابھی نوائے وقت مین ایک ایسء ہی خبر پڑھی!! رحمان ملک کے کہنے پر اُس گاڑی کو بھی بٰیر تلاشی کے چھوڑ دیا!!! اُس پر بھی امریکی ،خلوق سوار تھی!!

  • Dr. iftikhar Raja says:
    6/05/2011 08:44:00 PM

    یہ گاڑی ابیٹ آباد اور پشاور میں کل کھومتی رہی ہے، آور آج ہوگئے ہیں دھماکے دونوں شہروں میں
    پھر بھی رحمان ملک کہتا ہے کہ سب صحیح ہے تو درست کہتاہے ، امریکن نقطہ نظر سے

  • گمنام says:
    6/07/2011 03:22:00 PM

    پنجابی بھائيو پہلے اپنے بکل کا چور پکڑو، تم کب کسی کو انسان سمجھتے ہو؟ اتنی نا بڑھا پاکی داماں؛

    In Punjab, a Christian can’t present the provincial budget
    http://tribune.com.pk/story/183896/in-punjab-a-christian-cant-present-the-provincial-budget/

  • گمنام says:
    6/07/2011 03:24:00 PM

    سانحۂگوجرہ کے مقدمات داخل دفتر
    http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2011/06/110607_gojra_case_putoff_zs.shtml

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

اگر آپ اس موضوع پر کوئی رائے رکھتے ہیں، حق میں یا محالفت میں تو ضرور لکھیں۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔


جملہ حقوق بنام ڈاکٹر افتخار راجہ. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.

اس بلاگ میں تلاش